رینجرز کی جانب سے سندھ بھرمیں ایم کیوایم کے بلدیاتی نمائندوں کو طلب کرکے ان پر پی ایس پی میں شامل ہونے کیلئے دباؤ ڈالا جارہاہے ۔ ڈاکٹرندیم احسان ،کنوینر ایم کیوایم

متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے کنوینر ڈاکٹر ندیم احسان نے رینجرز اور دیگر ریاستی اداروں کی جانب سے سندھ بھر میں ایم کیوایم کے منتخب بلدیاتی نمائندوں کوطلب کرکے ان پر پی ایس پی میں شامل ہونے کے لئے دباؤ ڈالنے کی شدید مذمت کی ہے ۔ اپنے ایک بیان میں ڈاکٹرندیم احسان نے کہا کہ یہ حقیقت کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے کہ پی ایس پی ٹولہ اسٹیبلشمنٹ کا تشکیل کردہ ہے اوراس ٹولے کو کراچی اورسندھ کے شہروں پر مسلط کرنے کیلئے ریاستی طاقت کا بھرپور استعمال کیا جارہا ہے،اب تک ایم کیوایم کے ارکان اسمبلی کو اور دیگر ذمہ داروں کوجان سے مارنے کی دھمکیاں دے کرانہیں پی ایس پی ٹولے میں شامل ہونے پر مجبور کیا گیا اور اب کراچی ، حیدرآباد، سکھر، میرپورخاص، نوابشاہ ،ٹنڈوالہ یار اور دیگرشہروں میں منتخب ہونے والے ایم کیوایم کے تمام یوسی چیئرمین، وائس چیئرمین اور کونسلروں کو رینجرز کے دفاتر میں بلا بلا کر رینجرز کے اعلیٰ افسران کھلی کھلی دھمکیاں دے رہے ہیں کہ اگر انہوں نے قائد تحریک الطاف حسین کا نام لیا، ایم کیوایم کو نہ چھوڑا اور پی ایس پی میں شامل نہ ہوئے تو انہیں گرفتار کرلیا جائے گا اور بہت برا حشر کیا جائے گا،اسی طرح کی دھمکیاں انہیں نامعلوم فون نمبروں سے بھی مسلسل موصول ہورہی ہیں اور انہیں پی ایس پی میں شامل ہونے پر دباؤ ڈالا جارہا ہے،جبکہ ایم کیوایم کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے ذمہ داروں اور کارکنوں کو بھی گرفتار کر کر کے پی ایس پی میں شامل کروایا جارہا ہے ۔ ڈاکٹر ندیم احسان نے اس صورتحال کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ رینجرز اور دیگرریاستی اداروں کا کام امن وامان کا قیام ہے ،کیا ان کایہ کام ہے کہ وہ منتخب نمائندوں اورسیاسی کارکنوں کو ان کی پارٹی چھوڑنے، انہیں اپنی قیادت سے لاتعلقی اختیارکرنے اور کسی مخصوص ٹولے میں شامل ہونے کیلئے دباؤ اور دھمکیوں کے ہتھکنڈے اختیار کریں؟ انہوں نے کہا کہ جوافرادیہ عمل کررہے ہیں اور سیاسی معاملات میں اس طرح ملوث ہورہے ہیں وہ اپنے حلف سے غداری کے مرتکب ہورہے ہیں۔ ڈاکٹر ندیم احسان نے کہا کہ ایم کیوایم کے ارکان اسمبلی کے بعد اب منتخب بلدیاتی نمائندوں کو پی ایس پی ٹولے میں شامل کرانے کیلئے دی جانے والی ان دھمکیوں سے ثابت ہوتا ہے کہ آپریشن کا مقصد دراصل ایم کیوایم کو ختم کرنا اور اسٹیبلشمنٹ کے تشکیل کردہ ٹولے کو مسلط کرنا اور مہاجر عوام کو مکمل طور پر غلام بنانا ہے ۔ ڈاکٹر ندیم احسان نے کہا کہ عوام کس جماعت کو پسند کریں، کس کو ناپسند کریں، کس میں شامل ہوں اور کس کو مسترد کریں اس کاحق عوام کو ہے کسی ریاستی ادارے کونہیں، یہ عمل بند کیا جائے اور عوام کا فیصلہ عوا م کو کرنے دیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کے جبر کے ہتھکنڈوں سے ایم کیوایم کے کارکنان اورعوام کے دلوں سے قائد تحریک الطا ف حسین کی محبت کو نکالا نہیں جاسکتا اورہم ان کارکنان کو سلام تحسین پیش کرتے ہیں جو ان ہتھکنڈوں کے باوجود اپنی وفاپر قائم ہیں۔ ڈاکٹرندیم احسان نے جمہوریت پریقین رکھنے والے حلقوں سے اپیل کی کہ وہ اس صورتحال کا نوٹس لیں اور ان آمرانہ ہتھکنڈوں کے خلاف آواز بلند کریں۔